جس تنہا سے پیڑ کے نیچے ہم بارش میں بھیگے تھے

View previous topic View next topic Go down

GMT - 3 Hours جس تنہا سے پیڑ کے نیچے ہم بارش میں بھیگے تھے

Post by plhr60 on Sun Apr 06, 2014 4:43 pm

جس تنہا سے پیڑ کے نیچے ہم بارش میں بھیگے تھے

تم بھی اُس کو چھو کے گزرنا، میں بھی اُس سے لپٹوں گا




’’خواب مسافر لمحوں کے ہیں، ساتھ کہاں تک جائیں گے،،

تم نے بالکل ٹھیک کہا ہے، میں بھی اب کچھ سوچوں گا




بادل اوڑھ کے گزروں گا میں تیرے گھر کے آنگن سے

قوسِ قزح کے سب رنگوں میں تجھ کو بھیگا دیکھوں گا




رات گئے جب چاند ستارے لُکن میٹی کھیلیں گے

آدھی نیند کا سپنا بن کر میں بھی تم کو چھو لوں گا




بے موسم بارش کی صورت، دیر تلک اور دُور تلک

تیرے دیارِ حسن پہ میں بھی کِن مِن کِن مِن برسوں گا
avatar
plhr60
Monstars
Monstars

Aquarius Horse
Posts : 536
Join date : 2011-10-20
Age : 28
--Mood-- : Drunk

Character sheet
Experience:
33/500  (33/500)

Back to top Go down

View previous topic View next topic Back to top


Permissions in this forum:
You cannot reply to topics in this forum