وہ جو ایک رشتہء درد تھا ،مِرے نام کا تِرے نام سے

View previous topic View next topic Go down

GMT - 3 Hours وہ جو ایک رشتہء درد تھا ،مِرے نام کا تِرے نام سے

Post by Simba on Wed Apr 02, 2014 1:37 pm

کِسی دھیان کے، کِسی طاق پر، ھے دَھرا ھُوا
وہ جو ایک رشتہء درد تھا
مِرے نام کا تِرے نام سے،
تِری صُبح کا مِری شام سے،
سرِ رہگذر ھے پڑا ھُوا وھی خوابِ جاں
جسے اپنی آنکھوں سے دیکھ لینے کے واسطے
کئی لاکھ تاروں کی سیڑھیوں سے اُتر کے آئی تھی کہکشاں،
سرِ آسماں
کِسی اَبر پارے کی اوٹ سے
اُسے چاند تکتا تھا رات بھر
مِرے ھم سفر
اُسی رختِ غم کو سمیٹتے
اُسی خوابِ جاں کو سنبھالتے
مِرے راستے، کئی راستوں میں اُلجھ گئے
وہ چراغ جو مِرے ساتھ ساتھ تھے، بُجھ گئے
وہ جو منزلیں
کِسی اور منزلِ بے نشاں کے غبارِ راہ میں کھو گئیں
کئی وسوسوں کے فشار میں شبِ انتظار سی ھو گئیں
وہ طنابِ دل جو اُکھڑ گئی
وہ خیامِ جاں جو اُجڑ گئے
وہ سفیر تھے، اُسی داستانِ حیات کے
جو ورق ورق تھی بھری ھوئی
مِرے شوق سے تِرے رُوپ سے
کہیں چھاؤں سے، کہیں دُھوپ سے
avatar
Simba
Monstars
Monstars

Cancer Buffalo
Posts : 658
Join date : 2013-09-06
Age : 32
Location : pk
--Mood-- : Happy

Back to top Go down

View previous topic View next topic Back to top


Permissions in this forum:
You cannot reply to topics in this forum